urdupoetry|John elia|اب کسی سے مرا حساب نہیں

اب کسی سے مرا حساب نہیں 
میری آنکھوں میں کوئی خواب نہیں 

خون کے گھونٹ پی رہا ہوں میں 
یہ مرا خون ہے شراب نہیں 

میں شرابی ہوں میری آس نہ چھین 
تو مری آس ہے سراب نہیں 

نوچ پھینکے لبوں سے میں نے سوال 
طاقت شوخئ جواب نہیں 

اب تو پنجاب بھی نہیں پنجاب 
اور خود جیسا اب دو آب نہیں 

غم ابد کا نہیں ہے آن کا ہے 
اور اس کا کوئی حساب نہیں 

بودش اک رو ہے ایک رو یعنی 
اس کی فطرت میں انقلاب نہیں 

0

Write a comment

Your email address will not be published. Required fields are marked *

shares